پاکستانکھیل

جاوید میانداد پرائیویٹ اسکول مالکان پر برہم

 

اسکولوں نے اتنا پیسہ کمالیا ہے اسکے باوجود بیس فیصد رعایت دینے پر اعتراض ہے، سابق کپتان

کراچی (ویوز نیوز)پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور اپنے عہد کے لیجنڈ بیٹسمین جاوید میانداد نے نجی اسکولوں کی فیس میں 20 فیصد ڈسکاﺅنٹ کے حوالے سے پرائیویٹ اسکول مالکان کے بیان پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب پوری دنیا ایک مشکل وقت کا شکار ہے، اور ان پرائیویٹ اسکولوں نے اتنا پیسہ کمالیا ہے اسکے باوجود انہیں بیس فیصد رعایت دینے پر اعتراض ہے، اتنا پیسہ کمانے کے باوجود یہ اب بھی لوگوں کی حالت پر رحم کھانے کو تیار نہیں۔ ایک بیان میں عہد ساز بیٹسمین نے کہا کہ جب پوری دنیا ایک مشکل وقت کا شکار ہے، اور ان پرائیویٹ اسکولوں نے اتنا پیسہ کمالیا ہے اسکے باوجود انہیں بیس فیصد رعایت دینے پر اعتراض ہے، اتنا پیسہ کمانے کے باوجود یہ اب بھی لوگوں کی حالت پر رحم کھانے کو تیار نہیں حالانکہ انہیں بیس فیصد فیس بھی والدین سے نہیں لینا چاہیے، ان کا کیا جارہا ہے، انہوں نے اس ملک سے بے پناہ فائدہ اٹھایا، کروڑوں کمائے ہیں، جبکہ لوگ بیچارے پریشان ہیں، ان کے پاس کھانے تک کو نہیں۔ انہوںنے کہاکہ دنیا میں کہیں بھی تعلیم کو فروخت نہیں کیا جاتا، پڑھانے کے کوئی پیسے نہیں لیے جاتے، ہمارے بچپن میں محلے میں لوگ مفت ٹیوشن پڑھایا کرتے تھے، ہمارے بزرگ بچوں کو مفت پڑھاتے تھے۔جاوید میانداد نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ آپ کو صرف اسٹاف کی تنخواہ کے برابر رقم والدین سے لیکر باقی فیس ترک کردینا چاہیے، بلکہ میں تو یہ کہوں گا کہ یہ رقم بھی آپ کو خود دینا چاہیے،آپ نے اتنا کمالیا کچھ تو لوگوں کا خیال کریں،یہ چند ماہ کی بات ہے اس پر بھی آپ لوگوں کو نہیں چھوڑ رہے جوکہ پہلے ہی شدید پریشانی میں مبتلا ہیں۔انھوں نے حکومت سے اپیل کی کہ وہ ان نجی اسکولوں کو ختم کرکے لوگوں کو اچھی تعلیم کا انتظام کرکے دیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button