کالم/بلاگ

سورج گرہن

کل (یعنی 21 جون 2020ء بروز اتوار کو) صبح دس بجے اینولر سورج گرہن لگنے جارہا ہے، جس کا نظارہ دنیا بھر میں کروڑوں افراد کریں گے… یہ گرہن پاکستان میں سندھ کے چند علاقوں میں مکمل دکھائی دے گا… سورج گرہن کی تین اقسام ہوتی ہیں، جن میں سے ایک قسم اینولر سورج گرہن ہے… اینولر سورج گرہن اُس قسم کو کہتے جب چاند زمین سے دور ہوتا ہے تو سائز میں سورج کی نسبت چھوٹا دکھائی دیتا ہے، جس وجہ سے چاند سورج کو مکمل cover نہیں کرپاتا اور گرہن کے دوران بھی سورج کے کنارے دکھائی دے رہے ہوتے ہیں….یہ تاریخی سورج گرہن ہوگا کیونکہ اس نوعیت کا مکمل سورج گرہن اب دوبارہ پاکستان میں 20 مارچ 2034ء کو یعنی 14 سال بعد لگے گا… اس ضمن میں چند احتیاطی تدابیر لازمی یاد رکھیں:
1۔۔ سورج گرہن یا چاند گرہن حاملہ خواتین کے لیے سائنسی اور اسلامی دونوں لحاظ سے ہرگز خطرناک نہیں ہے، لہٰذا بالکل کسی کی باتوں میں آئے بغیر حاملہ خواتین اپنے امور انجام دیتی رہیں اور توہمات پھیلانے والوں کی حوصلہ شکنی کیجیئے…
2۔۔ سورج گرہن کے دوران معذور بچوں کو مٹی میں دبانے سے کوئی فائدہ حاصل نہیں ہوتا، ایسے معاملات سے گریز کیجیئے
3۔۔ سورج گرہن کے دوران وہی ریڈیشنز خارج ہورہی ہوتی ہیں جو عام دنوں میں سورج سے خارج ہوتی ہیں مگر چونکہ عام دنوں میں لوگ سورج کی جانب دیکھنے سے گریز ہی کرتے ہیں لیکن گرہن کے دوران تجسس کی وجہ سے دیکھنے لگتے ہیں جس وجہ سے گرہن کے دوران خصوصی طور پر سورج کو ننگی آنکھ سے دیکھنے سے منع کیا جاتا ہے
4۔۔ سن گلاسز چاہے جتنی بھی اچھی کمپنی کی ہوں، اس سے سورج گرہن کا مشاہدہ ہرگز مت کریں
5۔۔ سورج گرہن کے نظارے کے لیے مستند سولر گلاسز کا استعمال کیجیئے (یاد رہے سن گلاسز اور سولر گلاسز میں فرق ہے جو کہ آن لائن شاپس سے خریدی جاسکتی ہیں)
6۔۔ سولر گلاسز استعمال کرنے سے پہلے اس کے متعلق تحقیق کرلیں کہ تین سال سے زیادہ پرانی نہ ہوں یا گلاسز پہ سکریچز نہ ہوں
7۔۔ تالاب کے پانی میں بھی سورج گرہن کا عکس دیکھنے سے گریز کیجیئے
8۔۔ سورج گرہن کے نظارے کے لیے ایکسرے شیٹ کا استعمال کرنے سے گریز کیجیئے، سن گلاسز یا ایکسرے شیٹ سورج سے آنے والی الٹرا وائلٹ شعاعوں کو نہیں روک پاتیں جس وجہ سے بینائی متاثر ہونے کا خدشہ ہوتا ہے
9۔۔ دوربین یا ٹیلی سکوپ سے براہ راست سورج گرہن کا نظارہ ہرگز ہرگز مت کریں، جب تک اس پہ سولر فلٹر نہ لگا ہو
10۔۔ ویلڈنگ گلاسز کے 14 نمبر والے شیشے کے ذریعے سورج گرہن کا نظارہ کیا جاسکتا ہے.. اس سے کم نمبر کے ویلڈنگ گلاسز کو ایک دوسرے پر جوڑ کر ہرگز سورج گرہن کا نظارہ مت کیجیے…
11۔۔ ہماری آنکھ کے ریٹینا میں درد محسوس کرنے والے ریسپٹرز نہیں ہوتے جس وجہ سے آپ اگر سورج گرہن کا نظارہ کرتے ہیں تو ہمیں علم نہیں ہوپاتا اور اچانک سے بینائی ضائع ہوسکتی ہے، یا پھر اس کا ایفکٹ کچھ گھنٹوں بعد دیکھنے کو مل سکتا ہے، بے احتیاطی کی صورت میں بینائی ضائع ہونے کے علاوہ نظر کمزور ہونا یا color blindness ہوسکتی ہے
یقیناً کل کا سورج گرہن تاریخی ہوگا، جن علاقوں میں مکمل سورج گرہن ہوگا وہاں صبح کے وقت ایک منٹ کے لئے شام کا نظارہ بن جائے گا…. سورج گرہن کا نظارہ کیجیئے اور اس کے پیچھے کی سائنس سمجھیے تاکہ ہماری آنے والی نسلیں ان توہمات سے جان چھڑا سکیں
سورج گرہن کے وقت مستحب اعمال یہ ہیں۔
1.. اللہ کا ذکر کرنا
2….تکبیر کہنا
3.. استغفار کرنا
4…نماز پڑھنا
6…صدقہ کرنا
7..غلام آزاد کرنا
8۔۔۔عذاب قبر سے سے اللہ کی پناہ مانگنا (حوالہ جات بخاری: 1044 ،1054،1055،1059)
نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا۔ سورج اور چاند دونوں اللہ کی نشانیاں ہیں کسی کے مرنے سے ان میں گرہن نہیں لگتا۔ اللہ تعالی اس کے ذریعے اے اپنے بندوں کو ڈراتا ہے ۔ (صحیح بخاری1001)
اللہ تعالی ہمیں اپنی مرضیات کے مطابق زندگی گزارنے کی توفیق عطا فرمائے اور اس سورج گرہن سے اللہ حفاظت فرمائے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button