اہم خبریںاہم خبریںپاکستان

 جامعہ ارقم روحانی مرکز میں پیر قاری محمد یعقوب قادری کی زیرصدارت جماعت اہلسنت کانفرنس

 

کانفرنس زیرسرپرستی آرگنائزر جماعت اہلسنت پیر سید خلیل الرحمن شاہ ہوئی

 علماء مشائخ ونگ پنجاب کے صدر حضرت خواجہ دیوان حامد مودود مسعود چشتی فاروقی نے خصوصی شرکت کی

چشتیاں(نمائندہ خصوصی ملک آصف رضا)دیوان آف پاکپتن شریف زیب سجادہ نشین دربار عالیہ حضرت بابا فرید الدین مسعود گنج شکر (رح) و علماء مشائخ ونگ پنجاب کے صدر حضرت خواجہ دیوان حامد مودود مسعود چشتی فاروقی کی چشتیاں آمد قبلہ عالم حضرت خواجہ نور محمد مہاروی کے مزار پر حاضری دی اس موقع پر سجادہ نشین دربار خواجہ نور محمد مہاروی (رح) پیر خواجہ غلام معین الدین مہاروی اور خواجہ نصر محمود تونسوی نے انکا پرتپاک استقبال کیا بعدازاں دیوان حامد مودود مسعود نے جامعہ ارقم روحانی مرکز 4 فورڈ واہ میں عظیم الشان جماعت اہلسنت کانفرنس میں بطور مہمان خصوصی شرکت کی اور قرار داد پیش کی جس وزیر اعظم عمران خان سے مطالبہ ہے کہ برصغیر پاک و ہند کے قدیم اولیاء حضرت بابا فرید الدین مسعود گنج شکر (رح)کے 778 ویں سالانہ عرس مبارک کو روکنے کی بجائے ایس او پیز کے مطابق عرس کو منعقد کروایا جائے جس پر مقامی و ملک بھر سے آئے ہوئے علماء و مشائخ اور لوگوں کی کثیر تعداد نے انکی تائید کی۔

تفصیلات کے مطابق جامعہ ارقم روحانی مرکز چک 4 فورڈ واہ میں زیر صدارت پیر قاری محمد یعقوب قادری اور زیرسرپرستی آرگنائزر جماعت اہلسنت پیر سید خلیل الرحمن شاہ ایک عظیم الشان جماعت اہلسنت کانفرس منعقد ہوئی جس میں ملک بھر کے علاوہ ضلع بہاولنگر کی پانچوں تحصیلوں سے علماء و مشائخ کرام نے بھر شرکت کی اس موقع پر دیوان آف پاکپتن شریف زیب سجادہ نشین دربار عالیہ حضرت بابا فرید الدین مسعود گنج شکر (رح) نے قرار داد پیش کی انھوں نے اپنے خطاب میں وزیراعظم پاکستان عمران خان سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ پاکپتن شریف میں حضرت بابا فرید الدین گنج شکر (رح) کے 778 واں سالانہ عرس مبارک کو کرونا وائرس کا بہانہ بنا کر روکا جا رہا ہے حکومت کا یہ عمل ہرگز درست نہیں ہے حضور بابا فرید الدین گنج شکر کے عرس مبارک کو ایس او پیز کے تحت ہر صورت منعقد کروایا جائے انھوں نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان آج جس منصب پر فائز ہیں انھیں یہ بات بھی مدنظر رکھنی چاہیے کہ انھیں یہ وزارت عظمیٰ حضرت بابا فرید (رح) کی چوکھٹ سے ہی ملی ہے لہذا بجاے عرس مبارک پر پابندی لگانے کے عرس کے موقع پر آنے والے زائرین و عقیدت مندوں کیلئے خصوصی انتظامات کروانے جائیں انھوں نے کہا ہے کہ اہل اللہ اور اولیاء کرام کے مزارات سے ٹوٹے ہوئے دلوں کو سہارا اور بیماروں کو شفاء ملتی ہے اور اس روحانی درگاہ سے ہر خاص و عام فیض یاب ہو رہا ہے حکومت عرس میں رکاوٹ ڈالنے کی بجائے حوش کے ناخن لے اور حضرت با بابا فرید گنج شکر کا عرس منعقد کروانے کیلئے فوری اعلان کرے علماء و مشائخ اور لوگوں کی کثیر تعداد نے قراداد کی تائید کی. اس علاوہ دیگر مقررین آرگنائزر ساہیوال ڈویژن پیر غلام قطب الدین پانی پتی,ضلعی صدر اہلسنت و جماعت پاکپتن شریف سجادہ نشین دربار عبدالحکیم پیر ڈاکٹر علامہ سرفراز.ناظم اعلیٰ جامعہ ارقم روحانی مرکز مفتی خلیل الرحمن اور پروفیسر غلام محی الدین ھارون آباد نے اپنے خطاب میں کہا ہے کہ جماعت اہلسنت پاکستان ہر قسم کی فرقہ واریت سے اجتناب کرتی ہے اور تمام مسلمانوں کو آپس میں جوڑنے اور اتحاد کا درس دیتی ہے اور ہم علمائے اہلسنت دیوان آف پاکپتن کی جانب سے پیش کی جانے والی قرارداد کی مکمل حمایت کرتے ہیں اس موقع پر پیر سید ابو طیب محمد عبدالھادی شاہ کاظمی مشھدی آف منچن باد.مولانا بشیر احمد فردوسی حاصل پور.مولانا قاری اطہر طاہر چشتیاں.مولانا عبدالرحیم سعیدی فورٹ عباس قاری انعام اللہ خالد.حاجی ایوب اور دیگر علماء و مشائخ کرام کے علاوہ لوگوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button