انٹرنیشنلاہم خبریںاہم خبریںپاکستان

باون سال پہلے 28 اگست کو پاکستان میں قصہ کہانیوں جیسی شادی

دور دیس سے ایک شہزادہ بارات لے کر کراچی آیا اور دلہن بیاہ کر لے گیا

لاہور(ویوز نیوز رپورٹ)52 سال قبل 28 اگست کو  پاکستان میں قصے کہانیوں جیسی شادی سرانجام پائی، جس کا دنیا بھر میں بہت چرچا ہوا تھا، دور دیس سے ایک شہزادہ بارات لے کر کراچی آیا اور دلہن بیاہ کر لے گیا۔
 اردن کے حکمران شاہ حسین کے چھوٹے بھائی اور اس وقت کے ولی عہد شہزادہ حسن بن طلال کی شادی 28 اگست 1968ء کراچی میں پاکستانی لڑکی ثروت اکرام اللہ کے ساتھ انجام پائی تھی۔
شہزادہ حسن بن طلال اور ثروت اکرام اللہ آکسفرڈ یونیورسٹی میں کلاس فیلو تھے۔ یہیں وہ ایک دوسرے کو پسند کرنے لگے تھے۔
ثروت اکرام اللہ پاکستان کے پہلے سکریٹری خارجہ محمد اکرام اللہ کی صاحبزادی ہیں۔ اکرام اللہ کینیڈا، فرانس، پرتگال اور برطانیہ میں پاکستان کے سفیر بھی رہے۔
ثروت کی والدہ بیگم شائستہ سہروردی اکرام اللہ تحریک پاکستان کی رہنما، مصنفہ، پاکستان کی پہلی قانون ساز اسمبلی کی رکن اور سفارت کار تھیں۔ بیگم شائستہ سہروردی کے بھائی محمد ہدایت اللہ ہندوستان کے نائب صدر اور دوسرے بھائی حسین شہید سہروردی پاکستان کے وزیر اعظم بنے۔
شہزادے کی بارات 27 اگست 1968ء کو کراچی پہنچی اور 28 اگست کو نکاح ہوا، ان دونوں کا نکاح تحریکِ پاکستان کے رہنما اور ممتاز عالم دین مولانا جمال میاں فرنگی محلی نے پڑھایا تھا، گواہوں کے طور پر نکاح نامے پر صدر ایوب خان اور اردن کے شاہ حسین نے دستخط کیے تھے۔ شہزادہ حسن بن طلال اور ثروت اکرام اللہ کی شادی کا بہت شہرہ ہوا تھا.
شہزادی ثروت تین بہن بھائی ہیں۔ ان کی بہن سلمیِ سبحان بنگلہ دیش کی ممتاز بیرسٹر تھیں جن کی شادی بنگلہ دیش کے سابق وزیر خارجہ رحمن سبحان سے ہوئی۔ شہزادی ثروت کے بھائی ناز اکرام اللہ برطانوی/کینیڈین فلم ساز رہے۔
اگرچہ شاہ حسین نے تو چار شادیاں کیں مگر اپنے بڑے بھائی کے برعکس شہزادہ حسن نے صرف ایک ہی شادی کی۔ وجہ یہ ہے کہ شہزادہ حسن اور شہزادی ثروت خوشگوار اور مثالی زندگی گزار رہے ہیں۔ان دونوں کے چار بچے شہزادی رحما (پیدائش:1969)، شہزادی سمعیہ (پیدائش:1971)، شہزادی بدیعہ ( پیدائش:1974) اور شہزادہ راشد (پیدائش: 1979) ہیں۔
یہ امر قابل ذکر ہے کہ شاہ حسین نے 1999ء میں اپنی وفات سے چند روز قبل شہزادہ حسن بن طلال کی جگہ اہنے صاحبزادے شہزادہ عبداللہ دوم کو نیا شاہ مقرر کر دیا تھا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button