اہم خبریںاہم خبریںپاکستاندلچسپ و عجیب

شوق دا کوئی مل نئیں ،گوجر خان کی خانہ بدوش  نازنین اختر تین مضامین میں ماسٹر ڈگری ہولڈر

بچپن میں چوڑی فروخت کرنے والی کو محکمہ تعلیم نے ماسٹر ٹرینر کی بھی ذمہ داریاں سونپ رکھی ہیں

لاہور(ویوز نیوز رپورٹ)جھونپڑیوں میں پرورش پانے والی خانہ بدوش غریب خاندان کی بیٹی کو تین مضامین میں ماسٹر ڈگری حاصل کر کے پاکستان کی پہلی اور واحد خانہ بدوش ماسٹر ڈگری ہولڈر کا اعزاز حاصل  ہے ۔
نازنین اختر اس وقت گوجرخان کے نواح میں ایک سرکاری اسکول میں بطور سینیر ٹیچر اپنی خدمات سرانجام دے رہی ہیں ہیں جبکہ محکمہ تعلیم نے انہیں بطور ماسٹر ٹرینر کی ذمہ داریاں بھی سونپ رکھی ہیں۔
نازنین اختر نے نے 2009 میں پنجاب یونیورسٹی سے ہسٹری میں 2014 میں ایجوکیشن اور2016 میں آنگلش میں ماسٹر ڈگری حاصل کی۔
نازنین اختر نے بتایا کہ اس کا تعلق خانہ بدوش جھونپڑیوں والوں کے قبیلے سے تھا گوجرخان کے علاقے بانٹھ موڑ کے علاقے میں ان کا قبیلہ آباد تھا وہ بچپن میں والدین کے ہمراہ چوڑیاں فروخت کرنے جاتی تھی ۔
راستے میں اسکول جاتے صاف ستھرا یونیفارم پہنے سکول جاتے بچوں کو دیکھ کر اسے بھی کے اندر بھی پڑھنے کا شوق پیدا ہوا لیکن قبیلے کی سخت روایات سے بغاوت کرنا اسکے والدین کے لئے ممکن نہ تھا ۔
ایک دن اس کے والد نے چند روپے دے کر اسے دکان سے کچھ سامان لینے بھیجا وہ سامان کی بجائے کتابیں لے کر گھر واپس آئیں والد نے سامان کے بارے میں پوچھا تو میں نے بتایا کہ میں کتابیں لے آئی ہوں۔پڑھوں گی جس پر میرے والد کی آنکھوں میں آنسو آ گئے ۔
انہوں نے مجھے قریبی اسکول میں داخل کرایا تو قبیلے میں بھونچال آگیا لوگوں نے ہمارا سوشل بائکاٹ بھی کیا لیکن میرے والد نے پڑھائی جارہی رکھوائی میں نے بھی خوب شوق و جذبے کے ساتھ ایک سال میں دو دو جماعتیں پاس کی اور کچھ عرصے بعد والد انتقال کر گئے لیکن والدہ نے پڑھائی کا سلسلہ جاری رکھوایا ۔
چھوٹی عمر میں شادی کر دی گئی لیکن شوہر نے بھی پڑھائی میں رکاوٹ نہ ڈالی حصول تعلیم کا سلسلہ جاری رکھا چار بیٹوں کی پیدائش کے باوجود میں نے تعلیم کا سلسلہ جاری رہا۔
بڑے بیٹے کی عمر چوبیس برس ہے اس نے بی ایس سی کیا ہے باقی بیٹے بھی ا چھے سکولوں میں زیر تعلیم ہیں یہ سب کچھ اسکے شوہر کے تعاون سے ممکن ہو ا ۔
نازنین اختر نے تعلیمی میدان میں نمایاں کامیابیاں حاصل کر کے اپنے اور والدین کے خواب پورے کئے بلاشبہ یہ پاکستان کا روشن چہرہ ہے

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button