کالم/بلاگ

میرا قلم میری مرضی

خاوند کو پہلی رات ہی پتا چل گیا کہ بیوی پاک دامن نہیں
لیکن آنگن میں بیٹھے ماں باپ بہن بھائی اور خاندان کے لوگوں کو خوشیوں کے گیت گاتے دیکھا اور چپ کر گیا ۔یہ سالہ بھی عزت کا حقدار ہے ۔
وہ دن رات ان کے آرام کیلئے محنت کرتا تھا ایک دن اسے پتا چلا کے بیوی کسی اور کے عشق میں مبتلا ہے ۔اس نے اپنے چار معصوم بچوں کو دیکھا ۔۔بیوی کو سمجھایا اور چپ کر گیا
یہ مرد نام کی گھٹیا مخلوق بھی تھوڑی بہت عزت کا حق رکھتی ہے کہ نہیں ۔
آشنا سے مل کر شوہر کو قتل کر دیا مقتول پانچ بچوں کا باپ تھا ۔
مجال ہے جو اس خبر پر کسی نے کان دھرے ہوں ۔غیرت کے نام پر ایک عورت قتل تو آسمان سر پر ۔یہاں قبرستان بھرے پڑے ہیں ان جوانوں کے ناموں کی تختیوں سے جو غیرت کے نام پر مار دئیے گئے ۔۔لیکن ہے کوئی ذکر ؟۔ یہاں بس عورت کا مظلوم ہونا ہی ہم نے بیچنا ہے اور وہ بک بھی رہا ہے ۔ بیچتے جاؤ ۔۔کوئی اعتراض نہیں ۔۔لیکن مرد نام کی مخلوق کو بھی تھوڑی بہت عزت بخش دو ۔ہر بار اور بار بار یہی غلط نہیں ۔حال ہی میں ہوا عاصمہ اور فیصل والا واقعہ ہی دیکھ لو ۔عورت سر منڈوا کر میڈیا پر آگئی کہ بڑا ظلم ہوا ۔ناچنے پر مجبور کرتا تھا ۔
ساری دنیا نے تھو تھو کی اور پھر نکلا کیا ؟ اس عورت کی سو بندوں کے سامنے ناچتے ہوے ویڈیو نکل آئی ۔پھر پتا چلا محترمہ آئس کا نشہ بھی کرتی ہیں جو کچھ دن پہلے رو رو کر بتا رہی تھیں کہ مجھے شراب پینے پر مجبور کیا جاتا ہے ۔
خدارا لبرلز کی کاپی شدہ پوسٹ کو ایمان بنانا چھوڑ دیں ۔ہمارے معاشرے میں عورت کی بڑی عزت ہے لیکن ایک حصار بھی ہے ۔اس سے باہر نکل کر وہ جو مانگ رہی ہے وہ اسے کبھی نہیں مل سکتا…

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button