دلچسپ و عجیب

"Lived Once , Burried Twice”

1705 میں کسی عجیب قسم کے بخار سے دم توڑنے کے بعد ، آئرش خاتون مارگوری میککال کو جلدی سے دفن کردیا گیا تاکہ اس کی لاش سے وبا کو پھیلنے سے روکا جاسکے۔
اس کے خاوند نے مارگوری کو ایک قیمتی انگوٹھی دی گئی تھی، جسے اس کا شوہر اپنی بیوی مارگوری کی موت کے بعد اس کے جسم پر سوجن ہو جانے کی وجہ سے اتارنے میں ناکام رہا تھا۔
مارگوری کی قبر قیمتی انگوٹھی کی وجہ سے چوروں کے لئے ایک بہترین ہدف بن چکی تھی، چور لاش اور انگوٹی دونوں سے رقم بنا سکتے تھے۔
مارگوری کے دفن ہونے کے بعد اسی شام کو مٹی خشک ہونے سے پہلے ہی قبر پر ڈاکو پہنچ گئے اور کھدائی شروع کردی۔ بہت جتن کے باوجود چور انگلی سے انگوٹھی نکال نہ سکے تو انہوں نے انگلی کاٹ لینے کا فیصلہ کیا۔
جیسے ہی انگلی کاٹی تو خون کی دھار نکلی اور مارگوری حرکت میں آکر سیدھی بیٹھ کر چیخنے چلانے لگی –
قبر لوٹنے والوں کے انجام کا پتہ تو نہ چل سکا۔ مگر ایک کہانی کے مطابق یہ افراد موقع پر ہی ہلاک ہوگئے ، جبکہ ایک اور دعویٰ ہے کہ وہ فرار ہوگئے اور چوری کے پیشہ سے توبہ کر لی۔
مارگوری قبر کے سوراخ سے باہر آ کر واپس اپنے گھر چلی گئی –
دروازے پر دستک کی آواز سنتے ہی اس کا شوہر ، ایک ڈاکٹر ، بچوں کے ساتھ گھر میں تھا۔
مارگوری کے شوہر دستک کا انداز پہچانتے ہوئے بچوں سے کہا، اگر آپ کی والدہ آج بھی زندہ ہوتی تو ، میں قسم کھاتا ہوں کہ یہ اس کی دستک ہوتی۔۔
جب اس نے دروازہ کھولا تو اس نے اپنی بیوی کو وہاں کھڑا پایا ، وہ کفن میں ملبوس تھی – اس کی انگلی سے خون ٹپک رہا تھا لیکن وہ زندہ تھی ، لیکن اس کا شوہر یہ دیکھ کر فرش پر گرا اور دل کا دورہ پڑنے سے موقع پر ہی فوت ہو گیا جسے مارگوری کی خالی ہونے والی قبر میں دفن کردیا گیا۔
مارگوری نے دوبارہ شادی کی اور اس کے کئی بچے پیدا ہوئے۔ جب آخر کار اس کی موت ہوگئی تو اسے آئر لینڈ کے شنکیل قبرستان میں دفنایا گیا جہاں اب بھی اس کی قبر موجود ہے – جس پر لکھا ہے –
"Lived Once , Burried Twice”

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button