صحت

میتھی اور میتھی دانہ کے فوائد

فرمان رسول صلی اللہ علیہ وسلم ہے کہ میتھی سے شفا حاصل کرو میتھی کو عربی میں حلبہ ،فارسی میں شنبلیلہ ،پشتو میں ملخوزہ اور انگریزی زبان میں fenugreek بولتے ہیں

میتھی میں وٹامن بی B فولاد فاسفورس اور کیلشیم کی موجودگی جسمانی کمزوری اور خون کی کمی دور کرتی ہے

میتھی دال کی طرح پکا کر یا کھچڑی بنا کر یا میتھی کا پاوڈر یا چھاچھ میں شامل کر کے بھی فائدہ حاصل کیا جا سکتا ہے

تھوڑے سے میتھی دانے ہر طرح کی ترکاری میں ضرور ڈالنا چاہیئے

میتھی آنکھوں کی پیلی رنگت منہ کی کڑواہت اور دل خراب ہونے کی کیفیت ختم کرتی ہے

جس کے منہ سے لعاب یعنی رال بہتی ہو اس کے لیے میتھی کا استعمال حیرت انگیز تاثیر رکھتا ہے

میتھی پیٹ کی ہوا خارج کرتی ہے اور جگر کے افعال درست کرتی ہے

آنتوں کی کمزوری کے سبب اگر دائمی قبض ہوتو 5گرام میتھی کا سفوف گڑ میں ملا کر صبح شام پانی کے ساتھ کچھ دن تک استعمال کرنے سے نہ صرف دائمی قبض دور ہو گئ بلکہ جگر کو بھی طاقت ملے گی

معدے کے السر یا انتڑیوں کے زخم اور سوجن میں میتھی کا استعمال کرنا مفید ہے

پیچیش کے مریضوں کے لیے 5گرام چھوٹا چمچ پسی ہوئی میتھی پانی سے استعمال کرنا مفید ہے

میتھی پیٹ کے چھوٹے چھوٹے کیڑے مارتی ہے

میتھی کے دانے ہاضم اور پیٹ کے تناو اور اپھارہ کا مرض ختم کرتے ہیں

میتھی کا استعمال کمر درد تلی کے ورم گنٹھیا جوڑوں کے درد وغیرہ میں فائدہ مند ہے

میتھی دانے گڑ کے ساتھ جوش دے کر استعمال کرنے سے کمر درد اور جوڑوں کے درد میں آرام آتا ہے

گنٹھیا یعنی جوڑوں کے درد کے لیے میتھی کے 10 گرام تازہ پتے پانی میں پیس کر صبح نہار منہ روزانہ استعمال کریں

میتھی کے مسلسل استعمال سے اللہ تعالی کے فضل سے بواسیر کا خون بند ہو جاتا ہے اور بعض اوقات مسے piles جھڑ جاتے ہیں اگر ساتھ میں انجیر بھی استعمال کیا جائے تو فوائد میں اضافہ ہو سکتا ہے

بواسیر کے لیے لاجواب نسخہ یہ ہے کہ 250 گرام میتھی دانہ اور 250 گرام چھوٹی سبز الائچی دونوں کو باریک سفوف بنا اور دن میں دو سے تین بار چائے کا ایک چمچ دودھ یا پانی سے استعمال کریں ۔یہ نسخہ مذکورہ طریقہ سے استعمال کرنے سے بواسیر کے علاوہ ان بیماریوں کے لیے بھی مفید ہے بھوک کم لگنا پرانی گیس تبخیر معدہ بدہضمی کھٹی ڈکاریں سینے کی جلن پیٹ کی جلن پیٹ پھولنا کھانا کھاتے ہوئے ہی غنودگی

کھانسی کی دوائیں عام طور پر معدہ خراب کر دیتی ہیں پرانی کھانسی کے مریض کا دواوں کے استعمال سے نہ صرف معدے کی جلن اور بدہضمی کے مرض سے بچنا دشوار ہے میتھی کے استعمال سے نہ صرف کھانسی کو فائدہ ہوتا ہے بلکہ معدے کی بھی اصلاح ہوتی ہے

میتھی بلغم نکالتی اور پھپھڑوں کی اندرونی جھلیوں کی حفاظت کرتی ہے

میتھی دانہ کا پاؤڈر گرم پانی میں گھول کر پینا کھانسی اور دمے میں مفید ہے

میتھی دانہ پانی میں ہلکی آنچ پر خوب اچھی طرح پکائیں جب قابل برداشت ہو تو اس کے غرراے کرنے سے گلے کی خراش اور سوجن کے لیے مفید ہے

میتھی دانہ کے چھلکا اتار کے اس کا گودا لیپ poultice سوجن یا پھوڑوں پر باندھنے سے فائدہ ہوتا ہے

منہ کے اندر زبان کے نیچے یا ہونٹوں کی اندرونی سطح پر چھالے ہوں تو میتھی پکا کر کھائیں یا میتھی کے تازہ پتے پانی میں خوب اچھی طرح ابالیں اور اس کے نیم گرم پانی سے صبح شام غرارے کرنے سے منہ کے چھالے ٹھیک ہو جائیں گے

میتھی دانہ کا استعمال ذیابیطس diabetes کے ایسے مریضوں کے لیے بھی مفید ہے جو انسولین استعمال کرتے ہیں اس دوران چاول آلو گوبھی اروی کیلا اور دیگر میٹھی اشیاء سے پرہیز لازم کریں اور چہل قدمی مفید ہے میتھی دانہ کے استعمال کے ساتھ ساتھ ایلوپیتھک ادویات بھی جاری رکھیں تو کوئی حرج نہیں

میتھی دانے موٹے موٹے پسے ہوئے 20گرام روزانہ کھانے سے نہ صرف 10 دن کے اندر ہی پیشاب اور خون میں شوگر کی مقدار کم ہو جائے گی اگرچہ علامات مرض میں کمی کا اندازہ مریض کو خود بھی ہو جاتا ہے

میتھی دانہ کا ایک ذیل side effect یہ ہے کہ بعض مریضوں کا پیٹ شروع میں پھول جاتا ہے لیکن خود بخود کم بھی ہو جاتا ہے

لو low شوگر کے مریض میتھی استعمال نہ کریں

ایک تحقیق کے مطابق روزانہ میتھی دانہ کا استعمال کرنے سے کولیسٹرول cholesterol اور ٹرائی گلیسرائد triglyceride میں کمی آتی ہے دل کی بیماریوں کا امکان کم ہو جاتا ہے

میتھی پیشاب اور ہے گرودں کی سوجن کے سبب جب پیشاب کم آتا ہے تو میتھی کے استعمال سے پیشاب کھل کر آتا ہے

سردیوں میں روزانہ کھانے کے بعد پانی سے ایک چھوٹا آدھا چمچ استعمال کرنے سے سردیوں کی بیماریوں سے حفاظت ہوتی ہے

سردی کی وجہ سے پیشاب کی تکلیف ہو تو میتھی کے دانے شہد کے ساتھ استعمال کرنے سے فائدہ ہوتا ہے

میتھی دانوں کو پانی میں کچھ دیر بھگو کر نرم کر لینے کے بعد پیس کر بالوں میں ہفتے میں دو بار سر پر اس طرح لگائیں کی بالوں کی جڑوں میں اچھی طرح لگائیں کم از کم ایک گھنٹہ بعد سر دھو لیں بال گرنا بند اور لمبے ہو جائیں گے

میتھی کے پتے چہرے پر پیس کر لیپ کرنے سے چہرہ صاف ہو جائے گا

عورت کو سن بلوغت کی ابتداء میں ماہواری کے سبب بسا اوقات جسمانی تھکن کمزوری چہرے پر بےرونقی اور زردی آ جاتی ہے ماہواری کی زیادتی کے سبب بھی ایسی علامات پیدا ہو جاتی ہے ایسے موقع پر میتھی گوشت میں بھون کر یا کسی دوسری سبزی کے ساتھ کھانے سے یہ حالت رک جاتی ہے

جن عورتوں کو بار بار خون آتا ہو ان کے لیے میتھی کا استعمال مفید ہے

بچہ دانی کے ورم یعنی سوجن اور درد وغیرہ میں فائدہ مند ہے

بچے کی پیدائش کے بعد ماں کا دودھ کم پیدا ہو رہا ہوں تو میتھی کے پتے تھوڑی سی مقدار میں یا کسی ماہر طبیب کے مشورے سے استعمال کئے جائیں تو دودھ کی مقدار میں اضافہ ہو سکتا ہے

ڈسٹ الرجی کے شکار افراد ایک چائے کا چمچ میتھی دانہ لے کر آدھا گلاس پانی میں ابال لیں اور اس میں شکر یا شہد ملا کر صبح نہار منہ یا پھر رات کو سوتے وقت استعمال کریں

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button