کالم و مضامین

رزق کے سولہ دروازے

اللہ تعالیٰ نے رزق کے 16 دروازے مقرر کئے ہیں اور اس کی چابیاں بھی بنائی ہیں۔ جس نے یہ چابیاں حاصل کر لیں وہ کبھی تنگدست نہیں رہے گا۔ پہلا دروازہ نماز ہے، جو لوگ نماز نہیں پڑھتے ان کے رزق سے برکت اٹھا دی جاتی ہے وہ پیسہ ہونے کے باوجود بھی پریشان رہتے ہیں۔ دوسرا دروازہ استغفار ہے جو انسان زیادہ سے زیادہ استغفار کرتا ہے توبہ کرتا ہے اس کے رزق میں اضافہ ہو جاتا ہے اور اللہ تعالیٰ ایسی جگہ سے رزق دیتا ہے جہاں سے کبھی اس نے سوچا بھی نہیں ہوتا۔ تیسرا دروازہ صدقہ ہے، اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ تم اللہ تعالیٰ کی راہ میں جو خرچ کرو گے اللہ تعالیٰ اس کا بدلہ دے کر رہے گا، انسان جتنا دوسروں پر خرچ کرے گا اللہ تعالیٰ اسے دس گنا بڑھا کر دے گا۔ چوتھا دروازہ تقویٰ اختیار کرنا ہے جو لوگ گناہوں سے دور رہتے ہیں اللہ تعالیٰ اس کیلئے آسمان سے رزق کے دروازے کھول دیتے ہیں۔ پانچواں دروازہ کثرتِ نفلی عبادت ہے، جو لوگ زیادہ سے زیادہ نفلی عبادت کرتے ہیں اللہ تعالیٰ ان پر تنگدستی کے دروازے بند کر دیتے ہیں۔ اللہ تعالیٰ کہتا ہے اگر تو عبادت میں کثرت نہیں کرے گا تو میں تجھے دنیا کے کاموں میں الجھا دوں گا، لوگ سنتوں اور فرض پر ہی توجہ دیتے ہیں نفل چھوڑ دیتے ہیں جس سے رزق میں تنگی ہوتی ہے۔ چھٹا دروازہ حج اور عمرہ کی کثرت کرنا، حدیث میں آتا ہے حج اور عمرہ گناہوں اور تنگدستی کو اس طرح دور کرتے ہیں جس طرح آگ کی بھٹی سونا چاندی کی میل دور کر دیتی ہے۔ ساتواں دروازہ رشتہ داروں کے ساتھ اچھے سلوک سے پیش آنا، ایسے رشتہ داروں سے بھی ملتے رہنا جو آپ سے قطع تعلق ہوں۔ آٹھواں دروازہ کمزوروں کے ساتھ صلہ رحمی کرنا ہے، غریبوں کے غم بانٹنا، مشکل میں کام آنا اللہ تعالیٰ کو بہت پسند ہے۔ نواں دروازہ اللہ پر توکل ہے، جو شخص یہ یقین رکھے کہ اللہ دے گا تو اسے اللہ تعالیٰ ضرور دے گا اور جو شک کرے گا وہ پریشان ہی رہے گا۔ دسواں دروازہ شکر ادا کرنا ہے، انسان جتنا شکر ادا کرے گا اللہ تعالیٰ رزق کے دروازے کھولتا چلا جائے گا۔ گیارہواں دروازہ ہے گھر میں مسکرا کر داخل ہونا، مسکرا کر داخل ہونا سنت بھی ہے، حدیث میں آتا ہے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا اللہ تعالیٰ فرماتا ہے کہ رزق بڑھا دوں گا جو شخص گھر میں داخل ہو اور مسکرا کر سلام کرے۔ بارہواں دروازہ ماں باپ کی فرمانبرداری کرنا ہے، ایسے شخص پر کبھی رزق تنگ نہیں ہوتا ہے۔ تیرہواں دروازہ ہر وقت باوضو رہنا ہے، جو شخص ہر وقت نیک نیتی کیساتھ باوضو رہے تو اس کے رزق میں کمی نہیں ہوتی ہے۔ چودہواں دروازہ چاشت کی نماز پڑھنا ہے جس سے رزق میں برکت پڑھتی ہے۔ حدیث میں ہے چاشت کی نماز رزق کو کھینچتی ہے اور تندگستی کو دور بھگاتی ہے۔ پندرہواں دروازہ ہے روزانہ سورہ واقعہ پڑھنا ہے، اس سے رزق بہت بڑھتا ہے۔ سولواں دروازہ ہے اللہ تعالیٰ سے دعا مانگنا ہے جو شخص جتنا صدق دل سے اللہ تعالیٰ سے مانگتا ہے اللہ تعالیٰ اس کو بہت دیتا ہے۔ اے اللّه ہمیں ان سب پے اخلاص کے ساتھ عمل کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین  

حوالہ کتاب: اسلامی زندگی

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button