پاکستان

ریڈیو پاکستان ایف ایم 101 کے پروگرام بزم خواتین میں ”سماجی کام اور سوشل میڈیا کا کردار” پر گفتگو

سرگودھا (رپورٹ: رابعہ بصری )ریڈیو پاکستان ایف ایم 101 کے پروگرام بزم خواتین میں سماجی کام اور سوشل میڈیا کے کردار کے حوالے سے ایک معلوماتی پروگرام نشر کیا گیا جس کی میزبان منزہ انور گوئیندی جب کہ مہمان سوشل ایکٹیوسٹ اور شاعرہ رابعہ بصری تھیں
پروگرام میں خواتین اور سماجی بھلائی کے کاموں کے حوالے سے گفتگو میں رابعہ بصری نے کہا کہ خواتین جب کام کرتی ہیں ان کو بہت دشواریوں کا اور تنقید کا سامنا کرنا پڑتا ہے لیکن پر عزم اور باہمت خواتین اگر چاہیں تو اپنے کردار کی مضبوطی سے ثابت کر سکتی ہیں کہ وہ ہر طرح کی تنقید کے باوجود بھی معاشرے میں اپنے نام پیدا کر سکتی ہیں.
منزہ انور گوئیندی کے ایک سوال کے جواب میں رابعہ بصری نے بتایا کہ ہمارے معاشرے میں پڑھی لکھی بچیوں سے بہت نارواں سلوک کیا جا رہا ہے کہ ان کی صلاحیتوں کو بروئے کار لا کر اپنا بزنس چمکانے والے انہیں بہت کم معاوضہ دے رہے ہیں اور وسائل کی اس غیر منصفانہ تقسیم نے آج کے دور میں بھی خواتین کو پستی کا شکار کیا ہوا ہے اس کے علاوہ وہ خواتین جو کہ پڑھی لکھی نہیں ہوتی لیکن کسی مجبوری کے تحت گھر کا راشن پانی چلانے کی زمہ داری ان پر آن پڑے تو وہ مختلف صنعتوں اور فیکٹریوں میں محنت کرنے لگتی ہیں جنکی مجبوری کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ان کو بہت کم معاوضہ پر 8 گھنٹے سے بھی زیادہ کام کروایا جاتا ہے جبکہ وہی کام مرد حضرات سے دگنا بلکہ تگنا معاوضہ میں کروایا جا تا ہے جسکی وجہ انتظامیہ کی عدم دلچسپی اور حکومتی پالیسیوں میں عورتوں کو شامل نا کرنا ہے۔

. ہماری انتظامیہ کو اس پر بھی چیک اینڈ بیلنس کرنا چاہیے کہ وہ ادارے وہ فیکٹریاں جہاں خواتین کام کرتی ہیں ان کو دیکھا جائے کیا وہاں کے مالکان عورتوں کو انکی محنت پر مناسب اجرت ادا کر رہے ہیں کہ ان کی حق تلفی ہو رہی ہے اور ابھی تک ہمارے سرگودھا میں بھی اس قسم کا جاری ظلم خواتین کی ترقی و خوشحالی کی راہ میں رکاوٹ بنا ہوا ہے.۔

منزہ انور گوئیندی نے رابعہ بصری کے خیالات پر مزید اضافہ کرتے ہوئے کہ ہماری حکومت کو چاہیے کہ وہ انتطامیہ میں بیٹھے اعلیٰ افسران کو اس بات کا پابند کریں کہ جو خواتین مجبور ہو کر گھروں سے اپنا اور اپنے بچوں کا پیٹ پالنے کے لیے محنت مزدوری کرنے نکلتی ہیں ان کے لیے بھی کسی خاص پیکج کا اعلان کیا جائے اور انکو بھی وہی حقوق اور آسانیاں فراہم کریں جو کہ عام مرد حضرات کو بھی حاصل ہیں پروگرام کے آخر میں رابعہ بصری نے منزہ انور گوئیندی کی خواتین کے لیے کی جانے والی کوششوں کو بھی سراہا اور پروگرام میں مہمان نوازی پر شکریہ ادا کیا

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button